فضل الرحمن سے پوچھا جائے کہ وہ کس ادارہ کی بات کررہیں ہیں، ترجمان پاک فوج میجر جنرل آصف غفور

فوج ایک غیرجانبدار ادارہ ہےفضل الرحمن سے پوچھا جائے کہ وہ کس ادارہ کی بات کررہیں ہیں،سڑکوں پر آکر الزام تراشی نہیں کرنی چاہئے، مولانا فضل الرحمن سینیئر سیاستدان ہیں،
سرحدوں پر کشیدگی،کشمیر پر مظالم ایک طرف تو دوسری طرف پاک فوج نے جان کی قربانیاں دے کر امن قائم کیا،ملکی استحکام کوکسی قسم کا نقصان پہنچانے کی اجازت نہیں دے جائے گی،
جمہوری مسائل جمہوری طریقہ سے حل ہونے چاہئیں،ترجمان پاک فوج میجر جنرل آصف غفورالیکشن میں دھاندلی پرتحفظات ہیں تومتعلقہ فورمزپرجائ یںفوج آئینی حکومت کے ساتھ کھڑی ھےاپوزیشن سمجھ لے کہ فوج غیر جانبدار ادارہ ہے
فوج نےالیکشن میں آئینی اورقانونی ذمہ داری نبھائں
اپوزیشن اپنے تحفظات متعلقہ اداروں میں لے کر جائے،ڈی جی آئی ایس پی آر
ایک سال گزرگیا،اب بھی اپوزیشن متعلقہ اداروں میں جاسکتی ہے،ترجمان پاک فوج
سڑکوں پر آکر الزام تراشی سے مسائل حل نہیں ہوتے،ترجمان پاک فوج
اس وقت بھی لائن آف کنٹرول پر کشیدگی ہے،ڈی جی آئی ایس پی آر
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم جاری ہیں،میجر جنرل آصف غفور
ہم نے جانوں کی قربانی دے کر ملک میں امن وامان قائم کیا،ترجمان پاک فوج
پاکستان نے گزشتہ 20سال میں بہت مشکل وقت گزارا،ترجمان پاک فوج

Facebook Comments

POST A COMMENT.