شہرمیں ناجائز تعمیرات کرنے والی مافیا نے اب ملیر ٹاﺅن میں اپنے پنجے گاڑدیئے ہیں

ملیرٹاﺅن 123/9 کے رہائشی پلاٹ پر کمرشل مارکیٹ تیار
کراچی(ایچ آراین ڈبلیو) شہرمیں ناجائز تعمیرات کرنے والی مافیا نے اب ملیر ٹاﺅن میں اپنے پنجے گاڑدیئے ہیں اور اس میں ان کے ساتھ آفیشل پارٹنر ملیر ٹاﺅن ایس بی سی اے کا عملہ شامل ہے۔تفصیلات کے مطابق پلاٹ نمبر 123/9 ملیر بلڈرنے رہائشی پلاٹ کے گراﺅنڈ فلور پر متعدد دکانوں کی مارکیٹ بنا کر بالائی دو منزلوں پر لازمی کھلی جگہ کو مکمل طور پر گھیرتے ہوئے پورشن بنادیئے ہیں۔ معلوم ہوا ہے کہ بلڈر نے یہاں پر G+1 مکان کا رہائشی نقشہ پاس کرایا تھا اس کے بعد ایس بی سی اے میں پیکج طے کر کے لاکھوں روپے کی ادائیگی کے بعد اسے تعمیراتی قوانین کو ٹھکانے لگانے کا ٹاسک دے دیا گیا۔اس علاقہ میں ایس بی سی اے کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر ذوالفقار بلتی نے اس تعمیراتی خلاف ورزی کی کھلی چھوٹ دے رکھی ہے۔ ملیر ٹاﺅن کا علاقہ جو پہلے ہی انفرااسٹریکچر کی تباہی کا شکار ہے اور وہاں کے چیئرمین کی شرکت جو پہلے ہی کروڑوں روپے کا ترقیاتی فنڈ خردبرد کرکے نیب کے ریڈار پر آچکے ہیں اس صورتحال میں ایسی غیرقانونی تعمیرات نے علاقہ مکینوں کے لئے یوٹیلٹی سروسز کا ایک اور بحران کھڑا کردیا ہے۔ایچ آراین ڈبلیو نے اس سلسلے میں اے ڈی ذوالفقار بلتی سے ان کا موقف لینے کے لئے انہیں کال کی تو انہوں نے کال اٹینڈ نہیں کی۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.